سب فنکار ہیں پر مَیں تو اداکار نہیں..

یہ ہمارے معاشرے کا ایک پسندیدہ جملہ یا اعترافی بیان ہےجس کامقصد صرف اپنی انا کی تسکین اور اپنی غلطیوں سے جان چھڑانا ہے۔ کوئی بھی شخص یہ نہیں چاہتا کہ اسے اسکے بارے میں منفی باتوں یا رویوں کا سامنا کرنا پڑے ۔ کوئی کسی سچ کے سننے کا بھی منتظر…

کیا گوری رنگت پر بحث جائز ہے؟

گوری رنگت اور انگریزی، یہ ہمارے معاشرے کے دو پسندیدہ خصائص مانے جاتے ہیں، بندہ گورا بھی ہو اور پھر فر فر انگریزی بھی بولے واہ واہ تو کرنا بنتا ہی ہے۔ یہ ہمارے معاشرے کی اجتماعی سوچ ضرور ہے تاہم یہ سچ ہرگز نہیں۔ بے شک اکثریت انہی دونوں…

استاد بنئے تھانیدار نہیں…

پوری کلاس سہمی کھڑی تھی، ایسا نہیں تھا کہ کسی کو کچھ آتا نہیں تھا یا کسی میں کچھ سیکھنے کی لگن نہیں تھی۔ بات محض اتنی سی تھی کہ ریاضی کی استانی میڈم ارسلا سے سب ایسے ہی خوفزدہ رہتے تھے۔ کیونکہ کبھی وہ کان کھینچنے لگتیں تو کبھی معمولی سا…

تم لڑکی ہو، تم ہی خیال کر لیتیں…

معاشرہ خواہ کتنی ہی ترقی کا دعوی کر لے اور کتنا ہی صاف ستھرا کیوں نہ ہو، کہیں نہ کہیں کچرے کی بدبو ضرور آتی رہتی ہے۔ ہاں البتہ یہ کچرا دکھائی نہیں دیتا بلکہ کئی افراد کے ذہنوں میں موجود رہتا ہے اور وہ باقی افراد کو بھی اپنے جیسا ہی سمجھتے…

عمران خان کی تجویز کردہ سزا میں نجات

دورحاضر میں تحفظ نسواں کے دعوے اور نعرے محض مذاق بن کر رہ گئے ہیں۔ خواتین جو پہلے ہی معاشرے کا ایک محروم اور پسا ہوا طبقہ ہیں اور جنہیں مرد حضرات کے مقابلے میں زیادہ تحفظ کی ضرورت ہوتی ہے وہ ایک اسلامی مملکت میں رہتے ہوئے بھی غیر محفوظ ہیں۔…

خواتین کے وارثتی حقوق کب ملیں‌ گے؟

’’ بھئی آپ تو اپنے گھرجائیں ، شادی کے بعد شوہر کا گھر نصیب ہو گیا ہے تو بی بی اُسی کو اپنا گھر سمجھو ۔ بھاگ بھاگ کر یہاں آنے کی ضرورت نہیں ، اب ہمارے بچے بھی بڑے ہو رہے ہیں ۔ یہ مکان ہم بیچ نہیں سکتے ، تمھارے بھیا کو کاروبار میں خسارہ ہوا…

واقعہ کربلا، اسلام کیلئے سر کٹانے کا عہد

ماہ محرم کی سوگوار فضائیں نواسہ رسول حضرت امام حسینؓ اور ان کے 72 جانثار ساتھیوں کی یاد دلاتی ہیں۔ درسِ حسینؓ زندگی بھر کی ہدایت کیلئے کافی ہے کیونکہ خانوادہ رسالت صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے جس طرح دینِ اسلام کی حفاظت کا حق ادا کیا قیامت…

کیا کروں بھئی میرے بچوں کا باپ ہے…

حمیرا آج بھی پریشان صورت لئے بیٹھی تھی ، وجہ وہی روز کا جھگڑا ، وہی گھریلو تشدد کا معمول ۔ آج بھی ہمیشہ کی طرح اسکا شوہر باسط اسکے ساتھ مارپیٹ کر کے گیا تھا ۔ 7 سالہ ازدواجی زندگی میں یہ کوئی پہلا موقع نہیں تھا کہ وہ اپنے خاوند کے ہاتھوں…

عیدِ قرباں پر ضمیر کی قربانی

پرسوں عید قرباں ہے، بازاروں میں جانوروں کی خریداری کے لئے رش کا سماں ہے لیکن ہم نے ابھی تک بکرا نہیں خریدا ( بات جعمرات کی شام سے قبل کی ہے ، اب بکرا خرید کر ہی یہ مضمون لکھ رہے ہیں) ۔ بھئی کیا کریں ہم تو اس انتظار میں تھے کہ کوئی چھوٹا…

دستانے

’’ دستانے شروع سے ہی میرے پسندیدہ رہے ہیں، یہ نہ صرف ہاتھوں کو گندگی سے محفوظ رکھتے ہیں بلکہ اور بھی بہت سی باتوں کا راز سنبھالے رکھتے ہیں۔ ‘‘ یہ کہتے ہوئے سیٹھ صاحب نے سگار کا دھواں اپنے مزارعے شرافت کے منہ پر چھوڑ دیا۔ پھر وہ مسکرائے اور…