ہیرو نہیں بنا سکتے تو زیرو بھی نہ بنائیں

4,418

کل آفس میں بیٹھا سوشل میڈیا براؤزنگ کررہا تھا تو ہر جگہ Angel Angel گانے کے بارے میں بھانت بھانت کی بولیاں بولی جارہی تھیں۔ طاہر نام ویسے ہی ہمارے ملک میں کافی مشہور ہے چاہے وہ طاہر اشرفی ہویا طاہر شاہ،فی الحال میرا موضوع طاہر شاہ ہیں، جن کا حال ہی میں ریلیز ہونے والا گانا Angel ہے جس میں وہ جامنی رنگ میں ملبوس پری کا کردار نبھا رہے ہیں اور ساتھ ساتھ ایک خاتون اور بچہ بھی شامل ہیں۔ اس گانے کی اگر ویڈیو کی بات کی جائے توکوئی  Save the Mankindیعنی انسانیت کو بچانے کی بات ہورہی تھی۔

ہماری عوام نے اس گانے کو نہ صرف برا بھلا کہا بلکہ طاہر شاہ کو آلو فیس، بم کا گولہ اور ذہنی عذاب تک قراردیااور اُن کے گانے کی ویڈیو کو Viralقراردیا۔ ایک بات واضح کرتا چلوں ایک ریلیز کئے گئے گانے اور  Viral Videoمیں خاصا فرق ہے۔ وائرل ویڈیو اتفاق سے مشہور ہوتی ہے اور گانا پوری Production team کے ساتھ فلمایا جاتا ہے۔

ٹوینکل کھنّا، جنہوں نے اپنی ٹویٹ میں طاہر صاحب کو جامنی کلر کا گولہ کہا اور یہ بھی کہا کہ ہمیں ایٹم بم کی ضرورت نہیں طاہر شاہ ہی ہمارے لئے کافی ہے، اُن اداکاروں میں سے ہیں جنہیں خود انڈیا گھاس نہیں ڈالتا اور وہ صرف معزز اسی وجہ سے ہیں کیونکہ وہ اکشے کمار کی اہلیہ ہیں۔

چلیں مان لیتے ہیں طاہر شاہ کی ویڈیو بہت معیوب ہے اور وہ بہت برے لگ رہے ہیں، تو آپ نے Stringsکا گانا کوئی آنے والا ہے نہیں سنا جس میں جان ابراہم کالے کپڑوں میں پری کے پر لگائے اڑ رہے ہیں اور اس گانے کی ویڈیو بے معنی اور Lyricsبھی بے معنی ہیں؟ پر وہ جان ابراہم ہیں جو ٹھہرے باڈی بلڈر اور کہاں ہمارے طاہر شاہ نامناسب موٹے سے، فرق تو ہے نا بھئی۔
ایک جگہ یہ بھی پڑھنے کو ملاکہ طاہر شاہ کی ویڈیو دیکھ کر لوگ گمراہ ہورہے ہیں کیونکہ اُن کی مشابہت ملائکہ کے فرشتوں سے ہورہی ہے(نعوذباﷲ)۔ سوچنے کی بات یہ ہے کہ  Son Pariجس میں ایک خاتون فرشتہ بنی ہوتی ہیں،اس کو سب بچپن سے دیکھتے آرہے ہیں اور کافی پسند کیا جاتا ہے۔ شاید ہم دوقومی نظریہ کو ایک قومی نظریہ بنانے کی ناکام کوشش کرہے ہیں۔ خیر وہ انڈیا ہے سب چلتا ہے۔

طاہر شاہ نے اب تک دو گانے گائے۔ پہلا گانا  Eye to Eyeجسے پوری دنیا میں(سوائے پاکستان کے) پزیرائی ملی۔ کینیڈا سے انہیں  Best Pop Sensational Awardملا اور بھی کئی ایوارڈ سے نوازا گیا۔ اگر وہ اتنے ہی واحیات گانے بناتے ہیں تو انہیں آخر اتنے ایوارڈ کیسے ملے؟ کیا وہ واقعی اس اہل تھے؟

جب چپکی ہوئی پینٹ اور کان میں بندے پہن کر  Yo Yo Honey Singhلنگی ڈانس گا کر واہ واہ کرواسکتے ہیں تو طاہر شاہ تو ان سے Lyricsمیں کافی بہتر ہیں۔

اس سے پہلے2013میں بھی پاکستان کے ایک نجی ٹی وی چینل پر طاہر شاہ کو شو میں بلایا گیا اور ان کو بے عزت کیا گیا۔

آپ سے میری یہ درخواست ہے کہ خدارا اپنے ملک کے ٹیلنٹ کی عزت نہیں کرسکتے تو ان کو بے عزت بھی نہ کریں۔ طاہر شاہ بھی کمال کے آدمی ہیں، انہوں نے آج تک کسی کو برا بھلا تک نہ کہا۔ وہ صرف اپنے کام پر توجہ دیتے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

تبصرے بند ہیں.