صادق سنجرانی کون؟

2,716

سینٹ کے نو منتخب چیئرمین صادق سنجرانی کو آج سے چند روز پہلے تک پاکستان میں کم ہی لوگ جانتے تھے۔ وہ بلوچستان کی ایک نسبتاً غیرمعروف شخصیت ہیں۔

431026_50982365

کہنے والے کہتے ہیں کہ اس عہدے کے لئے ان کا نام وہیں سے آیا جہاں سے اکثر اہم عہدوں کے لئے نام آیا کرتے ہیں۔

چالیس سالہ محمددصادق سنجرانی کاتعلق ضلع چاغی سے ہے، جہاں کے پہاڑوں میں پاکستان نے بیس سال پہلے ایٹمی دھماکے کئے۔

یہ علاقہ ریکوڈک اورسیندک کےسونے اور تانبے کے ذخائر سے مالا مال ہے لیکن اسکا شمار بلوچستان کے غریب ترین اضلاع میں ہوتا ہے۔

0_2_123805_album

ایک ایسے صوبے میں جہاں قبائیلی اثر روسوخ سیاسی وزن کا تعین کرتا ہے، صادق سنجرانی کا بلوچ عوام سے رابطہ نہ ہونے کے برابر ہے۔

وہ زیادہ تراسلام آباد میں رہتے آئے ہیں۔ جہاں انہیں طاقتور اداروں اور شخصیات کی قربت کا موقع ملا۔

ان رابطوں کے توسط سے ان کے خاندان کے لوگوں کو سیاسی اور کاروباری فائدے ملتے رہے۔

4ecf9831a33f451990b7bb204b521227_18

صادق سنجرانی کے والد نوکنڈی سے ضلع کونسل چاغی کے رکن منتخب کرائے گئے۔

انکے ایک نوجوان بھائی رازق سنجرانی کئی سال سے سیندک پراجیکٹ کے مینجنگ ڈائریکٹر ہیں جبکہ دوسرے بھائی اعجاز سنجرانی حکومت بلوچستان میں معاون خصوصی لگائے گئے۔

sirjani_400

صادق سنجرانی 1998ء میں میاں نواز شریف کے ساتھ تھے۔ انکی حکومت کا تختہ الٹنے کے بعد وہ سیاسی طور پر غیرفعال ہوگئے۔

پھر 2008ء کے بعد وہ پیپلز پارٹی سے جا ملے۔ اس دور میں وہ وزیراعظم سیکٹریٹ میں شکایتی سیل اور معائنہ کمیشن کے کوآرڈینیٹر رہے۔

صادق سنجرانی کو پارلیمانی سیاست کا کوئی تجربہ نہیں ، نہ ہی وہ کبھی کسی جمہوری جدو جہد کا حصہ رہے ہیں۔

Muhammad Sadiq Sanjrani

ان کے الیکشن سے نہ بلوچستان کی کوئی جیت ہوئی نہ وفاق کی۔ بلکہ شاید اس سے بلوچستان میں دہائیوں سے جاری احساس محرومی میں اضافہ ہی ہو کیونکہ ۔ پیسے اور زبردستی کے زور پر پیدا کیے جانے والے نمائیندے عوام کو نہیں کہیں اور جوابدہ ہوتے ہیں۔

ڈر یہ ہے کہ ان کی قیادت میں وفاق کی علامت کا یہ اہم منتخب فورم کہیں ایک غیر فعال اور مفلوج ادارہ نہ بنا دیاجائے۔

مصنف صحافی اور تجزیہ کار ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

1 تبصرہ

  1. Rana کہتے ہیں

    Pagal keh Puter chup Kar .Teri baqwas fazool Hai . fazool Artikel.

تبصرے بند ہیں.