کاش پاکستان کرپشن فری ملک بن جائے

2,390

گزشتہ ہفتے پاکستان کے اہم ادارے نیشنل اکاؤنٹبلیٹی بیورو نے اپنے ایک چھاپے کے دوران گلبرگ کے علاقے سے سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ کو گرفتار کرلیا ہے۔ نیب کا اس بارے میں کہنا ہے کہ احد چیمہ کو پیشی کا نوٹس بھیجا مگر وہ حاضر نہ ہوئے جس پر ایکشن لینا پڑا۔ نیب کا کہنا ہے کہ احد چیمہ آشیانہ ہاؤسنگ سکیم میں 32 کنال اراضی پر فراڈ کر چکے ہیں جس کے تانے بانے پیراگون سٹی پراجیکٹ سے جا ملتے ہیں۔

احد چیمہ کی گرفتاری سے لے کر اب تک پاکستان مسلم لیگ ن کے کئی اجلاس ہوچکے ہیں۔ ہر میٹنگ کا ایک ہی موضوع ہے۔۔۔۔احد چیمہ۔ وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف اجلاسوں کی صدارت تو کر رہے ہیں مگر نیب کے بارے میں سخت الفاظ کا استعمال نہیں کررہے جبکہ لیگی رہنما سابق ڈی جی ایل ڈی اے کی گرفتاری پر نالاں ہیں۔ احد چیمہ جو کہ سابق ڈٰ جی ایل ڈی اے تھے، اب پنجاب تھرمل پاور لمیٹڈ کے سی ای او ہیں۔ اس کے علاوہ لاہور میں زیر تعمیر میگا پراجیکٹ میٹرو ٹرین پراجیکٹ کے بھی حساب کتاب دیکھ رہے ہیں۔

آشیانہ ہاؤسنگ سکیم وزیر اعلیٰ پنجاب کی غریب عوام کو سہولت پہنچانے کی ایک کاوش تھی جو کہ ایل ڈی اے کے زیر سایہ لاہور، ساہیوال، جہلم، فیصل آباد، سرگودھا اور پنجاب کے دیگر شہروں تک پھیلنی تھی۔ اس سکیم کے تحت ایسے غریب افراد جن کے پاس رہنے کو چھت نہیں، ان کو ایک ایسا رہائش کا علاقہ فراہم کیا جائے گا جہاں سکول، کالج، ہسپتال جیسی تمام بنیادی سہولیات موجود ہوں گی۔

دو سال قبل شروع کیے جانے والا یہ منصوبہ شروع ہی سے کرپٹ لوگوں کی زد میں رہا ہے۔ اس پراجیکٹ میں کرپشن کی اطلاع پر میاں شہباز شریف نے مانیٹرنگ ٹیم بھی تشکیل دی تھی جس نے عوام کی شکایت دور کرنے کی خاطر جائزہ لیا اور رپورٹ میاں صاحب کو جمع کرائی مگر وہ رپورٹ محض ایک دکھاوا تھا۔ اسی لیے نیب کو خود کارروائی کرنی پڑی۔ اگر کرپشن ہورہی تھی تو تب ہی منظر عام پر لا کر کرپٹ لوگوں کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے تھی۔

احد چیمہ کو احتساب عدالت نے 11 روزہ ریمانڈ پر بھیج دیا ہے جہاں ان سے نیب تفتیش کرے گی اور حقائق عوام کے سامنے لائے جائیں گے۔ بہرحال سابق ڈی جی ایل ڈٰی اے پر الزامات ابھی ثابت نہیں ہوئے تاہم شکوک پورے ہیں جس کی بنا پر وہ قانون کی گرفت میں ہیں۔ احد چیمہ نے کرپشن کی ہے یا نہیں اس کا فیصلہ احتساب عدالت میں ہوجائے گا۔ نیب کے پاس ایسے ثبوت بہرحال موجود ہیں جو کہ آشیانہ ہائوسنگ سکیم پراجکٹ میں کرپشن کو ظاہر کرتے ہیں ورنہ اتنے بڑے افسر کو ان ہی کے آفس میں جا کر گرفتار نہ کیا جاتا۔

نیب پاکستان کا قابل اعتبار اور اہم ترین ادارہ ہے جہاں ملک کے قابل ترین لوگ اپنے کاموں میں مصروف عمل ہیں۔ پنجاب حکومت کے ترجمان ملک احمد خان کا اس بارے میں کہنا ہے کہ بہت سے لوگ نیب کے کئی نوٹسز کے باوجود بھی پیش نہیں ہوتے، ایسی گرفتاریاں کبھی بھی عمل میں نہیں لائی گئیں۔احد چیمہ کی گرفتاری کے بعد بیوروکریٹس سمیت اعلیٰ افسران نے اپنا اپنا احتجاج ریکارڈ کروا دیا ہے جبکہ زرائع کا کہنا ہے کہ نیب اب دیگر کرپشن میں ملوث افسران کو بھی اپنی گرفت میں لے گی اور سب کا احتساب ہوگا۔

ویسے تو دنیا میں کوئی بھی ملک ایسا نہیں ہوگا جہاں کرپشن نہ ہوتی ہو مگر جس طرح پاکستان میں ہوتی ہے ویسی تو دنیا میں شاید ہی کہیں ہوتی ہو۔ اس کے باوجود ہم سب کی یہی کوشش اور دعا ہے کہ پاکستان کرپشن فری ملک بن جائے اور ترقی کی بلندیوں کو چھو جائے۔ پاکستان زندہ باد

عثمان بٹ صحافت کے طالب علم ہیں اور دنیا نیوز کے ساتھ کام کر رہے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

3 تبصرے

  1. کاشف احمد کہتے ہیں

    نیب پاکستان کا سب سے قابل اعتبار ادارہ ہے اور وہاں سب فرشتے کام کرتے ہیں نیب نے 1999 کے پاکستان کو بلکل کرپشن فری کردیا تھا کرپشن اتنی کم ہو گئ تھی کے دودھ اور شھد مفت ملنے لگا تھا اور تعلیم ، بجلی اور گیس اتنی عام ہو گئ تھی کے کیا بتاٶں اور ریل گاڑی اتنی تیز چلتی کے ہوائی جہاز بھی کیاچلتا ہوگا لیکن پھر پتہ نہیں کہاں سے یہ منحوس نواز شریف اور شہباز شریف آگئے اور سب کچھ ختم کردیا اور دیکھو نہ کے پی کے ، سندھ اور بلوچستان میں کو کوئی کرپشن نہیں ہوتی کیونکہ وہاں کو کام ہی نہیں ہوتا نہ کوئی میگا پراجیکٹ لگتا ہے اس لیئے کرپشن کا تو سوچنا بھی گناہ ہے لیکن پنجاب اور وفاق میں یہ دو نوں منحوس بھائی بلاوجہ کام کرواتے ہیں بڑے بڑے پراجیکٹ لگاکر بجلی گیس اور ریلوے کی مفت سواری ہم سے چھین لیتے ہیں اب دیکھو نہ 1999 سے 2013 تک ہم کتنے خوش تھے یہ منحوس کیوں آگئے پتہ نہیں

    1. احمد بلال کہتے ہیں

      واہ واہ کیا خوب نقشہ کھینچا ہے آپ نے بھئی لگتا ہے کہ ن لیگ کی مجلس برائے سماجی ابلاغ (سوشل میڈیا ٹیم) کے رکن ہیں. ارے میاں پہلے اگر ایسا ہی تھا جیسا کہ بیان کیا گیا ہے تو اس وقت اتنا شور کیوں نہیں مچا رہے تھے ن لیگ والے. چلو شور نہیں مچایا تو ادارے کی بہتری کے لئے کوئی اقدامات ہی اٹھا لیتے جب حکومت میں آنے. نہیں میاں نہیں اب یہ سودا نہیں بکنے کا. پہلے شور نہیں مچا اس لئے کہ پہلے ایسا ہی ہوگا. اور اب مرچیں اس لئے چبائیں جا رہیں کہ اب نیب نے ایسا ہونے سے انکار کر دیا ہے. وہ کیا ہے کہ
      “You can fool some people all the time, you can fool all the people sometimes, but you cannot fool all people all times. “

  2. qazi کہتے ہیں

    شاہد احمد دہلوی اپنی کتاب ‘ اجڑے دیار میں ، قائد اعظم ، بی ،ای ،او ، سی ، کے چارٹر جہا زوں پر دلی پاکستان آ نے والوں کا ذکر کیا ہے یہ ان ہی کی اولادیں جو پاکستان پر قابض ہو چکی ھیں،،،

تبصرے بند ہیں.