برطانوی حکومت  کے نیشنل آرکائیوز سے ہزاروں اہم فائلز کس نے غائب کیں؟

1,927

حال ہی میں انکشاف ہوا ہے کہ برطانوی حکومت کی نیشنل آرکائیوز میں سے ہزاروں اہم فائلز پراسرار طریقے سے غائب ہو گئیں ہیں۔ ان فائلز میں احمدی  جماعت کے قیام اور مرزا غلام احمد کے مجدد اور مسیح موعود ہونے کے دعوے کے بارے میں  مرتب کی گئی برطانوی حکومت کی رپورٹس کی فائلز  بھی شامل ہیں۔ برطانوی راج کے دور کی  ان فائلز میں 1889ء میں مرزا غلام احمد کے جھوٹی نبوت کے دعوے کے بارے میں پنجاب سی آئی ڈی کی وہ رپورٹس  بھی شامل تھیں جو وائسرائے کو بھیجنے کے لئے گورنر کو پیش کی گئی تھیں۔ ان فائلوں میں اس جماعت کے قیام کے خلاف  پنجاب کے عوام کا  رد عمل اوراس کے برطانوی راج کے لئے مضمرات اوربر صغیر کی سیاست پر اثرات کے بارے میں رپورٹس بھی شامل تھیں۔ ان فائلوں میں میں مرزا غلام احمد کے   انتقال کے بعد  احمدی جماعت کے راہنمائوں کے خلاف ہونے والی علماء کی بغاوت کے متعلق بھی رپورٹس شامل ہیں۔

40 سال سے زیادہ عرصہ پہلے انڈیا آفس ریکارڈز  لائبریری کی L/P سیریز کی کیٹیلاگ میں ان  فائلوں کا اندراج تھا۔انڈیا آفس ریکارڈز  لائبریری  میں ایسٹ انڈیا کمپنی کے 1600ء  سے 1858ء تک کی قدیم دستاویزات اور انڈیا آفس کے 1858ء سے 1947ء تک کے ریکارڈ ز محفوظ تھے ۔ یہ لائبریری ، برٹش لائبریری کے زیر انتظام تھی اور اب برٹش لائبریری میں ضم ہو گئی ہے۔

british library

1970ء میں جب میں نے مطالعہ کے لئے ان فائلز کے اجراء کی درخواست کی تو ایک طویل عرصہ تک مجھے  کوئی جواب نہیں ملا۔ میں نے جب لائبریری کے جنوبی ایشیاء کے شعبہ کے سربراہ سے استفسار کیا تو انہوں نے مجھے بتایا کہ یہ ساری فائلز ، برطانوی دفتر خارجہ نے اپنی تحویل میں لے لئے ہیں۔انہوں نے  اس کی کوئی وجہ نہیں بتائی لیکن ان کی خاموشی معنی خیز تھی۔ بعد میں معلوم ہوا کہ یہ ساری فائلز مہر بند کر کے نیشنل آرکائیوز کی تحویل میں دے دی گئی ہیں۔

national archies 2اب اس ہفتہ یہ انکشاف ہوا ہے  کہ نیشنل آرکائیوزسے ایک ہزار سے زیادہ فائلز غائب ہوگئی  ہیں۔ غالب خیال ہے کہ احمدی جماعت کے بارے میں فائلز بھی ان  ہی غائب شدہ فائلز میں شامل ہیں۔ ابھی تک یہ پتہ نہیں چل سکا کہ آیا یہ فائلز جان بوجھ کر غائب کی گئی  ہیں یا یہ چوری ہوگئی  ہیں۔ نیشنل آرکائیوز میں ایک کروڑ دس لاکھ سے زیادہ فائلز اور دستاویزات محفوظ ہیں ۔ تو آخر کیا راز ہے کہ یہی فائلز کیوں غائب ہوئی ہیں؟

national archivers files shelfنیشنل آرکائیوز کی  جو فائلز اور دستاویزات غائب ہوئی ہیں ان میں بتایا جاتا ہے  کہ  برطانوی دفتر خارجہ کی 1970ء کی وہ فائلز بھی ہیں جو اسرائیل کے ساتھ برطانیہ کے فوجی تعاون اور جوہری اشتراک کے بارے میں ہیں ۔ برطانیہ کی پہلی لیبر حکومت کا تختہ الٹنے کے لئے خفیہ ادارے MI6 کے افسروں کی سازش ، شمالی آےئر لینڈ میں IRA کی عسکری تحریک اور فاک لینڈ کی جنگ کے بارے میں فائلز بھی انہی فائلوں میں  شامل ہیں۔

آصف جیلانی لندن میں مقیم پاکستانی صحافی ہیں۔ انہوں نے اپنے صحافتی کرئیر کا آغاز امروز کراچی سے کیا۔ 1959ء سے 1965ء تک دہلی میں روزنامہ جنگ کے نمائندہ رہے۔ 1965ء کی پاک بھارت جنگ کے دوران انہیں دہلی کی تہاڑ جیل میں قید بھی کیا گیا۔ 1973ء سے 1983ء تک یہ روزنامہ جنگ لندن کے ایڈیٹر رہے۔ اس کے بعد بی بی سی اردو سے منسلک ہو گئے اور 2010ء تک وہاں بطور پروڈیوسر اپنے فرائض انجام دیتے رہے۔ اب یہ ریٹائرمنٹ کے بعد کالم نگاری کر رہے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

تبصرے بند ہیں.