ایسا نا کرتے تو درست ہوتا

3,368

اگرکل حکومت وقت تحریک لبیک یا رسول اللہ کے کار کنوں کو طاقت سے ہٹانے کی بجائے ان سے مزاکرات کر لیتی تو درست ہوتا کیوں کہ یہ کوئی سیاسی دھرنہ نہیں تھا اور اس کا مقصد کسی سیاسی جماعت کو اپنی طاقت دکھانا نہیں تھا۔اس کا مقصد مذہب سے تھا اور مذہب اسلام کے خلاف طاقت کی جیت نہیں ہو سکتی۔ اس بات کی دلیل ماضی میں فرعون،مرہب،تمررود جیسے لوگ ہیں۔ لیکن یہ تو اپنے لوگ تھے اسلام کی طاقت کو جاننے والے تھے یہ ایسا نا کرتے درست ہوتا۔

لیکن بات یہ ہے کہ حکومت آخر ایسا کیوں کر رہی ہے؟ کیا لوگوں  کو اپنی طاقت اور ان کی غلامی کا احساس کروانا چاہتی ہے؟ حکومت جانتی بھی ہے کہ پہلے بھی17 جون 2014ء کو سانحہ ماڈل ٹاون جیسے حساس واقعات ہو چکے ہیں ۔جس میں 14 لوگوں کی جان گئ اور 53 سے زائد کو گرفتار کیا گیا۔ کیا ہم اس کو رسم بنانا چاہتے ہیں ۔ اگر حکومت ایسا نا کرتی تو درست ہوتا۔

فیض آباد آپریشن میں بھی 8 افراد شہید اور 220 کے قریب زخمی ہو چکے ہیں۔ کیا ہماری غریب عوام کا خون اتنا سستا ہو چکا ہے کہ ایک انسان جس کے ہاتھ سے غلطی سر زد ہوئی ہے اسے سامنے لانے کی بجائے ہم عوام کا قتل عام کر رہے ہیں۔ دکھ اس بات کا ہے کہ اس معاملے کو حل کرنے کے لیے طاقت کا استعمال ہوا۔ اس کا نتیجہ کیا نکلا؟ جن کو بھگانے نکلے تھے ان کو مزید مضبوط کر کے واپس آگئے ہیں۔ ایسا نا کرتے تو درست ہوتا۔

PAKISTAN-UNREST-RELIGION-PROTEST

PAKISTAN-UNREST-RELIGION-PROTEST

اتنا سب کچھ کرنے کے باوجود بھی اس آپریشن کا اختتام اس بات پر ہونا ہے کہ ان کا مطالبہ مان لو اور وہ بندہ پیش کر دو۔ لیکن یہی اگر پہلے روز کر دیتے تو درست ہوتا۔ آپ دوسرے ممالک کو کیا پیغام دے رہے ہیں؟ یہی کہ آپ اپنی عوام کی بات سننے کی بجائے انہیں طاقت سے چپ کروا دیتے ہیں؟

اگر آپ کو عوام کی تکلیف کااحساس تھا تو آپ کو یہ بات بھی یاد رکھنی تھی کہ اگر آپریشن کامیاب نہ ہوا تو کیا ہوگا۔ آپ صرف فیض آباد کو خالی کرنا چاہتے تھے اور اب پورا ملک بند ہے۔حکومت نے اپنے آپریشن کی ناکامی کو چھپانے کے لیے آزادی صحافت پر ہاتھ ڈالا جو کہ غیر جمہوری عمل ہے۔

آج ہم نے خوداپنی آنکھوں سی دیکھا کہ مظاہرین پر جس طرح آنسو گیس کے شیل چلائے جا رہے تھے،ان کا نشانہ عام لوگ بھی بن رہے تھے۔ آخر کب تک ہم لوگوں کو اپنی طاقت کے بل بوتے پر روک کر رکھیں گے۔اگر ہم اپنی عوام کا احساس رکھتے ہیں توہمیں اپنی ذمہ داری کو بھی سمجھنا ہوگا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

تبصرے بند ہیں.