ریاست کے بچے

0 2,185

ہمیں بھی اچھا نہیں لگتا کہ کوئی ان بچوں کو سٹریٹ چائلڈ کہے کیونکہ یہ تو ہماری قوم کے وہ بچے ہیں جو پوری دنیا میں پاکستانی صلاحیتوں کا لوہا منوا چکے ہیں اور آئندہ بھی پوری قوم کی نمائندگی کریں گے۔ میرا بس چلے تو انہیں سٹیٹ چائلڈ کہوں۔ یہ فخر پاکستان ہیں، ملک کا مستقبل ہیں معمار وطن ہیں، لیکن کیونکہ بین الاقوامی سطح پر بھی لفظ سٹریٹ چلڈرن ہی استعمال ہوتا ہے تو ہم بھی پھر یہی استعمال کرتے ہیں۔

مسلم ہینڈز کے کنٹری مینجر صاحبزادہ سید ضیاالنور نے ایک ملاقات کے دوران گفتگو میں بتایا کہ مسلم ہینڈز نے پہلی مرتبہ لیاری کے بچوں پر مشتمل ایک سٹریٹ چلڈرن فٹ بال ٹیم تشکیل دی تھی اور اس ٹیم نے مختلف سالوں میں دنیا بھر میں ہونے والے سٹریٹ چلڈرن فٹ بال ورلڈ کپس میں نمایاں پوزیشنز حاصل کر کے پاکستان کا نام پوری دنیا میں روشن کیا تھا۔ اس مرتبہ آزاد ریاست جموں و کشمیر کے بچوں پر مشتمل اسی طرز کی ایک ٹیم تشکیل دی گئی ہے جو اگلے ماہ یعنی اگست میں گوتھیا کپ کھیلنے کے لئے چائنہ روانہ ہو رہی ہے، جہاں دنیا بھر سے آئی 700 سے زائد ٹیمیں ایک دوسرے کے مد مقابل ہونگی اور یہ تاریخ میں پہلی مرتبہ ہوگا جب سٹریٹ چلڈرن فٹ بال ٹیم بین الاقوامی سطح پر آزاد ریاست جموں و کشمیر کی نمائندگی کرے گی۔

میں مسلم ہینڈز کے جاری تمام منصوبہ جات کے بارے میں جاننا چاہتا تھا مگر مجھے سٹریٹ چلڈرن فٹ بال ٹیم آزاد ریاست جموں و کشمیر پراجیکٹ اتنا اچھا لگا کہ میں 3 گھنٹے تک جاری رہنے والی اس ملاقات میں صرف مسلم ہینڈز کی سٹریٹ چلڈرن فٹ بال ٹیم کے بارے میں ہی بات چیت کرتا رہا۔ انہوں نے بتایا کہ کشمیری بچوں پر مشتمل اس ٹیم میں کئی ایسے بھی بچے ہیں جو اپنے والد کے سایہ سے بھی محروم ہیں جبکہ 18 پلیئرز پر مشتمل اس ٹیم کا انتخاب صرف اور صرف قابلیت کی بنا پر ہوا ہے۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ان بچوں کو گزشتہ کئی ماہ سے بہترین کوچز کی سر پرستی میں بین الاقوامی معیار کی ٹریننگ دی جا رہی ہے اور اس وقت یہ بچے مکمل طور پر کسی بھی ٹیم کا مقابلہ کرنے کو تیار ہیں۔ میں سٹریٹ چلڈرن فٹ بال ٹیم کے بارے میں سنتا رہا اور میری حیرت بڑھتی رہی کہ کس طرح ذرا سی سر پرستی ملنے پر یہ بچے برازیل اور ناروے جیسے ممالک میں پوری دنیا سے آئی ہوئی سیکھی ہوئی ٹیموں سے فتح چھین کر اپنے ملک میں لے آئے تھے۔ اگر ریاست پاکستان ذرا سی توجہ دے اور مسلم ہینڈز کے اس جاری منصوبے میں ہی اپنا حصہ ڈال لے اور ان بچوں کے لئے بین الاقوامی سٹینڈرڈز کے گراؤنڈ، نیشنل فٹ بال ٹیم کے کوچز وغیرہ کی فراہمی کو یقینی بنائے تو یقیناً یہ سٹیٹ چلڈرن اس مرتبہ اگست میں ہونے والے گوتھیا کپ میں بھی بہترین پوزیشن حاصل کر کے جشن آزادی کی خوشیوں کو دوبالا کریں گے۔

مصنف دنیا ٹی وی میں رپورٹر اور یوتھ کونسل پاکستان کے صدر ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.