براؤزنگ زمرہ

لوگ کہانی

کٹی پتنگ اور نوجوان نسل

ایک پتنگ تھی رنگ برنگی، خوبصورت اور سڈول۔ بنانے والے نے اسے ایسا تراشا تھا کہ دکھتے ہی دل کو لبھا لیتی تھی۔ بس ایک نظر پڑنے کی دیر تھی اور آپ کا دل وہ گیا۔ اسی لیے وہ آسمانوں پر جھوم جھوم اڑتی تھی، لہرا کر کبھی دائیں ، کبھی بائیں۔ زقند بھر…

ہم ناکام کیوں‌ ہوتے ہیں؟

گاؤں کے پرانے کنویں میں تین بکرے گر گئے۔ تینوں نے شور مچانا شروع کر دیا، بچاؤ بچاؤ۔ سارے ریوڑ کے بکرے ان کی آواز سن کر کنویں کے منڈیر پر پہنچ تو گئے لیکن ان کو نکالنے کیلئے کچھ کر نہیں سکتے تھے۔ کنویں میں گرے بکروں نے جلد ہی محسوس کر لیا…

طلسمی تلوار کی تلاش

گذرے وقتوں میں کسی ملک میں ایک ڈریگن نے ڈیرے ڈال لیے۔ اپنے تین خوفناک سروں کے ساتھ ہر آنے جانے والے کو لقمۂ شکم بنانا اس کا معمول ٹھہرا۔ اپنی خوفناک ساخت، منہ سے آگ اگلنے کی صلاحیت اور پھرتی و طاقت کے ساتھ اس نے جلد ہی لوگوں کی زندگی…

!!بات کچھ اور تھی۔۔۔

(مزدوروں کے عالمی دن کی مناسبت سے آجر اور اجیر کے رشتے کو مضبوط کرتا ایک افسانہ) ٭٭٭٭٭ نام تو دراصل ان کا ‘’استفسار مقصود لکھنوی’’ تھا مگر کیونکہ لوگوں کو سمجھنے اور بولنے میں پریشانی کا سامنا رہتا تھا، اس لیے دفتر میں سب انہیں بچپن  کے…

خطرناک کون…؟

میاں گیڈر، یہ تم کدھر کو جا رہے ہو؟۔ بی لومڑی! میں نے یہاں جنگل میں نہیں رہنا، شیر بہت ظالم ہے، بادشاہت کے رعب میں ہم جانوروں پر ظلم کرتا ہے۔ نہ یہاں پر کھانے کو کچھ خاص ہے، میں تو انسانوں کی بستی میں جا رہا ہوں۔ کیا اونچی اونچی عمارتیں ہیں…

ہیں‌ تلخ‌ بہت بندہ مزدور کے اوقات

چھمو کا اصل نام شمیم تھا، وہ لوگوں کے گھروں میں کام کرتی تھی اور اس کا شوہر عبدالشکور جسے سب شکورا کہتے تھے دیہاڑی دار مزدور تھا۔ دونوں میاں بیوی دن رات محنت مزدوری کر کے اپنا اور اپنے پانچ بچوں اور بوڑھے باپ کا پیٹ پالتے تھے۔ آج عبدالشکور…

اوڑھ لے گر مسلمان بیٹی حجاب

چٹاخ….چٹاخ… تیسرا تھپڑ کھاتے ہی وہ حیرت کا بت بنی، درد کی تاب نہ لاتے ہوئے لڑکھڑائی اور زمین پر ڈھیر ہوگئی۔ درد گال سے زیادہ دل میں ہوا تھا، تھپڑ کی آواز سناٹے میں اس قدر گونج دار تھی کہ مہمانوں سے بھرا گھر اس کے کمرے میں جمع ہو جاتا لیکن…

آہ! گریٹ عبدالقادر ’’میدان ‘‘ چھوڑ گئے

زندگی کا اختتام موت پر ہوتا ہے اور اس تلخ حقیقت پر مرنے والے نے زندگی کیسے گزاری ؟ اس سمیت بہت سے سچ سامنے آ جاتے ہیں۔ بحثیت مسلمان ہمارا ہر لمحہ امتحان ہے ،جبکہ انسان ہونے کے ناطے سے سارے راز سانسوں کا ناطہ ٹوٹ جانے پر کھل جاتے ہیں۔ کرکٹ…

حج کی سعادت حاصل کرنے والی پہلی برطانوی خاتون !

زینب کوبولڈ ، اسکاٹ لینڈ کے ارل آف ڈینمور کی صاحب زادی تھیں۔ ۱۸۶۷ میں پیدائش کے وقت ان کا نام لیڈی ایولن مرے رکھا گیا تھا۔ ان کا بچپن اپنی مسلم آیاوں کے ساتھ الجزائر اور قاہرہ میں گذرا تھا اور اسی دوران انہوں نے عربی پر عبور حاصل کر لیا…

بچھڑا کچھ اس ادا سے

ایک دور تھا کہ کراچی میں گھر سے نکلنے سے قبل لوگ خبریں ضرور سنا کرتے تھے۔اس کی وجہ یہ ہرگز نہ تھی کہ اہلیان کراچی کے لوگوں کو با خبر رہنے کا بڑا شوق تھا بلکہ اس کا مقصد یہ ہوتا تھا کہ جانے سے قبل یہ معلوم کرلیا جائے کہ کس کس راستے پر دھرنا…