براؤزنگ زمرہ

آوارہ گردی

بیگم شاہی مسجد

بیگم شاہی مسجد کو مریم زمانی مسجد بھی کہا جاتا ہے۔ مسجد بیگم شاہی لاہور شہر کے تیرہ دروازوں میں سے ایک مستی دروازہ کے پاس موجود ہے۔ مغلیہ عہد میں تعمیر کی گئی یہ مسجد آج شدید خستہ حالی کا شکار ہے۔ کہا جاتا ہے کہ مستی دروازہ اس مسجد کے بعد…

پنج پیر راکس

اگر ذیشان بلندیاں آپ کو عزیز ہیں، اگر آپ دل افروز فطرت کے دلدادہ ہیں، اگر آپ سطح زمین سے زمین کا فضائی نظارہ کرنا چاہتے ہیں، اگر آپ من کے مسافر ہیں اور خود کو وسعتوں اور پنہائیوں کی نذر کرنا چاہتے ہیں، اگر آپ نے یونیک کلر، شیپ اور سائز کی…

کٹاس راج اور امرکنڈ کا نوحہ

شری کٹاس راج مندر پاکستان میں ہندوُوں کے لئے سب سے متبرک مقام اور پورے ہندو دھرم میں ہردوار سے باہر جوالا مکھی واقع ہماچل پردیش کے بعد دوسرا متبرک ترین مقام ہے۔ یہ تاریخی مقام ضلع چکوال میں کلر کہار سے چواسیدن شاہ جانے والی سڑک پر کلر کہار…

پلندری

سرزمینِ پلندری کو فردوس بریں سے تشبیہہ دی جا سکتی ہے اور نہ سویزر لینڈ سے۔ یہاں بنجوسہ اور شونٹر جیسی جھیلیں ہیں، نہ ہی تولی اور چناسی جیسی چوٹیاں۔ اس کے کوہستانوں کے دامن میں چشمے، جھرنے اور آبشاریں تو موجود ہیں لیکن انہیں کوٹلی کے ٹھنڈے…

ملکہ کوہسار یا سفید پوش ڈاکووں کا مسکن

ملکہ کوہسار مری قیام پاکستان سے پہلے سے ہی ایک تفریحی مقام طور پر جانا جاتا تھا۔ اس وقت کے انگریزحکمران میدانی علاقوں کی گرمی سے پریشان ہو کر کچھ دن سکون سے گزارنے یہاں آ جاتے تھے۔ پورے برصغیر میں چند ہی ایسے مقام تھے جو کہ پہنچ میں بھی…

رانی کی باؤلی ۔ پلندری

کہوٹہ کی وادی پنجاڑ سے کشمیر کی طرف نکلیں تو نگاہیں بار بار فلک بوس پلندری سے ٹکراتی ہیں۔ پرفضا پلندری ڈوگرہ راج کے خلاف مزاحمت کی علامت، تحریکِ حریت کا سرِ آغاز، آزاد کشمیر کا پہلا کیپٹل اور ضلع سندھوتی کا مرکز ہے۔ لیکن اس کے باوجود کشمیر…

ریل گاڑی تا جہاز کا سفر

ریل گاڑی تا جہاز تک کا فرق وہی بتا سکتا ہے جس نے اپنے سفر کا آغاز ریل گاڑی سے کیا ہو اور کئی برسوں تک ریل گاڑی پر سفر کرنے کے بعد اسے اتفاقاَ جہاز کا سفر کرنے کا موقع ملا ہو۔ مڈل کلاس سے تعلق رکھنے والا پاکستانی طبقہ پاکستان کی کل آبادی کا…

انسٹن گرین، اک جہاں اور بھی ہے

جب کبھی بھی انگلینڈ کی بات ہو تو سب سے پہلے لندن ہی ذہن میں آتا ہے۔ لندن کی بات بھی تو کچھ اور ہے۔ جہاں تک میری بات ہے تو مجھے لندن کا خیال  نہیں آتا۔ ایسا نہیں کہ لندن مجھے پسند نہیں، بہت پسند ہے۔ وہاں کا زیر زمین ریلوے کا نظام، ملٹی کلچرڈ…

کیمرون ہائی لینڈ۔۔۔ شائد ہی کہیں اور ہو

میرے چاروں طرف سبزہ ہے، پھول ہیں اوربھینی بھینی خوشبو سانسوں میں اتر رہی ہے۔ میں اس وقت سطح سمندر سے چھ ہزار فٹ بلندی پر بیٹھا ہوں۔ تا حد نظر چائے کے باغات ہیں۔ فضا میں چائے کے باغات سے اٹھنے والی خوشبو پھیلی ہے جو دل و دماغ کو سکون بخش رہی…