بر صغیر میں موروثی حکمرانی، تباہی کی باعث۔

1991میں بے نظیر بھٹو جب اقتدار سے محروم تھیں تو انہوں نے بر صغیر کے حزب مخالف کے رہنماوں کی اسلام آباد میں ایک کانفرنس بلائی تھی جس میں ہندوستان کے وی پی سنگھ، بنگلہ دیش کی حسینہ واجد اور سری لنکا کی صدر چندریکا کمار تنگا کے حریف بھائی…

چابہار ہندوستان کے کنٹرول میں ۔۔۔

پیر ۲۴ دسمبر کو ایران کی بندرگاہ چا بہار کا انتظام ہندوستان نے سنبھال لیا ہے۔جنوبی ایران میں یہ بندرگاہ ، صرف ۸۰ کلومیٹر کے فاصلہ پر پاکستان کی بندرگاہ گوادر کی حریف بن کر ابھری ہے ۔ گو کہا یہ جاتاکہ چابہار بندرگاہ کا مقصد جنگ زدہ…

عرب بہار جو خزاں سے اجڑ گئی۔

آٹھ سال ہوئے جب ۱۷ دسمبر کوتیونس میں سڑک پر سبزی بیچنے والے نوجوان محمد بوعزیزی نے حکام کی چیرہ دستیوں سے تنگ آکر خودکو آگ لگا لی تھی جس کے شعلوں نے عوام میں ایسی آگ بھڑکائی کہ ۲۴ سال سے اقتدار پر قابض آمر زین العابدین بن علی کی حکومت…

سولہ دسمبر۔ اکہتر

یہ ان دنوں کی بات ہے جب اکتوبر 1954میں گورنر جنرل غلام محمد نے دستور ساز اسمبلی توڑ دی تھی اور اس اقدام کو دستور ساز اسمبلی کے اسپیکر مولوی تمیز الدین خان نے سند ھ چیف کورٹ میں للکارہ تھا۔ اس دوران جب چیف جسٹس کانسٹنٹائین کی عدالت میں مولوی…

ہندوستان کی سیاست پر ہندو دھرم کا مکمل غلبہ

بلا شبہ اس وقت ہندوستان ، کٹر ہندوتا کے گھور اندھیرے میں بری طرح سے گھرا ہوا ہے. ملک کی سیکولرازم کی حامی ایک سو ۳۳ سالہ پرانی کانگریس پارٹی نے بھی سیاست کے لئے مذہب کا سہارا لیا ہے اور بھارتیا جنتا پارٹی سے سبقت لے جانے کے لئے کوشاں ہے۔…

بریگزٹ – برطانیہ بحران کا شکار

برطانیہ کی یورپ سے علیحدگی کی بے تابی کے عذاب کی وجہ سے برطانوی وزیر اعظم ٹریسا مے اس وقت چومکھی بحران میں گرفتار ہیں۔۲۰۱۶ کے ریفرینڈم کو جس میں برطانوی عوام کی اکثریت نے یورپ سے علیحدگی کے حق میں فیصلہ دیا تھا ڈھائی سال ہوگئےہیں. حکومت…

خدارا بستیوں کو ڈھنگ کا نام دیں

کہنے کو تو بعض لوگ کہتے ہیں کہ نام میں کیا رکھا ہے؟ لیکن بہت سے لوگوں کے نزدیک نام ہی میں سب کچھ ہے، نام نہیں تو کچھ بھی نہیں۔ بے نام یا گمنام کی نہ تو کوئی شناخت ہے، نہ شخصیت ہے اور نہ کوئی اسے پوچھتا ہے۔ اللہ تعالی کے بھی ۹۹ نام ہیں اور…

جنگیں، مغربی ممالک اور مفادات

گیارہ نومبر کو گیارہ بجے صبح پیرس اور لندن میں پہلی عالم گیر جنگ کے خاتمے کے ایک سو سال پورے ہونے پر خاص تقریبات کا یوں اہتمام کیا گیا جیسے کہ جشن منایا جا رہا ہے۔ پیرس میں جہاں صلح نامہ پر دستخط ہوئے تھے ، ساٹھ ملکوں کے سربراہوں اور اہم…

اسرائیلی طیارے کی آمد کا معاملہ پر اسرار گھتیوں میں الجھ گیا!

۲۴ ۔اکتوبر کو راول پنڈی میں نور خان ائیر بیس پر اسرائیل کے طیارے کی مبینہ آمد کا معاملہ اسی طرح پر اسرار بن گیا ہے اور جوابات کا متقاضی ہے جس طرح ۲ مئی ۲۰۱۱ کو امریکی کمانڈوز کاپاکستان کی سرحد پار کر کے ایبٹ آباد میں فوجی چھاؤنی کے قریب…

کیا ایران کے خلاف امریکی اقتصادی جنگ کامیاب رہے گی؟

۵ نومبر سے ایران کے خلاف امریکا کی جنونی اقتصادی جنگ کا آغاز هو گیا ہے جس کے تحت ایران کے خلاف اقتصادی تادیبی پابندیوں کا وسیع تر جال پھیلا دیا جائے گا اور ایران کے تیل کی برآمدات یکسر روک دی جائیں گی ، گو بعض ملکوں کو رعایت دینے پر بات…