بلوچستان کا لُٹا پُٹا ثقافتی ورثہ

بلوچستان میں انگریز نو آبادیاتی دور کو ختم ہوئے اب کئی دہائیاں بیت چکیں مگر اس دور کا ورثہ آج بھی بلوچستان میں ان کی موجودگی کا اعتراف کرتا ہے۔ تاریخی ورثہ جو کسی بھی قوم کی ثقافت اور تہزیب و تمدن کی علامت تصور کیا جاتا ہے۔ اس پر گزری تاریخ…

گوادر میں تیزی سے ختم ہوتے سبز کھچوے

مکران کے ساحلی علاقے "دران" جیوانی ، "تاک" ، اورماڑہ اور پاکستان کے سب سے بڑےجزیرے ''اسٹولہ" کو گرین ٹرٹل کے لئے محفوظ علاقہ تصور کیا جاتا ہے۔ ماہرین حیاتیات کی نظر میں یہ علاقے آبادی سے دور ہونے کی وجہ سے سبز کچھوؤں کی افزائش نسل کے لئے…

وہ خواہش جو گوادر کے نوجوان کو پولنگ اسٹیشن لے گئی

بلوچستان کے دیگر حلقوں کی نسبت گوادر کی صوبائی اسمبلی کی نشست کو اس وجہ سے زیادہ اہم قرار دیا جارہا تھا کہ گوادر سی پیک اور بندرگاہ کا شہر ہے۔مقتدر حلقے گوادر کو پاکستان کی شہ رگ سمجھتے ہیں۔لیکن سی پیک کے تحت اربوں ڈالرکےجن منصوبوں پر دستخط…

پسنی فش ہاربر کی عدم بحالی

پسنی ماہی گیروں کی ایک قدیم بستی ہے، جو ماضی میں مکران کا تجارتی گیٹ وے تھا۔ یہاں بحری جہازوں کے ذریعے سے ایکسپورٹ اور امپورٹ کا کاروبار ہوا کرتا تھا۔ ساحل کنارے آباد یہ بستی اب ایک شہر بن چکی ہے۔ پسنی میں 90 فیصد افراد کا روزگار سمندر سے…