قیدی کے خواب

بے روزگاری ایک ایسے قیدی کی کہانی ہے جس کا جرم یہ ہے کہ وہ کچھ نہیں کرتا اور سزا یہ کہ جب تک وہ خود چاہے قید ہی رہے۔ حالت جمود بھی بے روزگاری ہی ہے اور ایسا شخص ایک مؤدب اور مظلوم قیدی ہے۔ ایسا شخص قید میں سلاخوں سے لگ کر باہر آزاد چلنے…

مجھے بالیاں‌ بیچنی ہیں

فضل دین کی رات کروٹیں بدل بدل کر کٹیں اور صبح سویرے وکیل صاحب کے چیمبر کے باہر، ان کے انتظار میں اسے ناشتے کا ہوش ہی نہ رہا۔ جوان بیٹے کو پولیس ایک مقدمے کی تفتیش میں لے گئی تھی اور آج جج کے سامنے پیش کرنا تھا۔ اس کے مطابق عدالتوں میں ہی تو…

میرے بابا کو بچا لو، مجھے بابا جیسا بننا ہے

وہ مار کھا تا رہا اور اور مجھ سے نظریں چراتا رہا، وہ میرا ہیرو تھا مگر یہ خیال کسی کو نہ آیا۔ وہ میرے باپ کو میرے سامنے گھسیٹتے رہے، مزاحمت کرنے پر منہ پر لگے طمانچے نے جیسے بھری دنیا میں میرا بھرم اور مان روند کر رکھ دیا ہو۔ یہ کیسا ہیرو…

بھوک تہذیب کے آداب بھلا دیتی ہے

تہذیب اور روایات کو عصر حاضر میں عملی طور پر بھی دیکھا جا سکتا ہے۔ لیکن اس کی حتمی شکل کسی حادثے کا نتیجہ نہیں بلکہ صدیوں کی پروڈکشن (Production) کا نتیجہ ہے۔ معاشرتی کردار، پنپتے انسانی رویوں کا سکرپٹ (script)، اخلاقی قدروں کا پلاٹ، صحیح…